زبان: اردو
UN0154758.jpg

اپنے گھر سے دور ملازمت کرنے والی عورت بھی اپنے بچے کو اپنا دودھ پلانا جاری رکھ سکتی ہے۔

اگر کوئی ماں اوقات کار کے دوران اپنے بچے کے پاس موجود نہیں رہ سکتی، تو اسے چاہیئے کہ جب وہ اکٹھے ہوں تو اسے اکثر اپنا دودھ پلاتی رہے۔بچے کو باربار دودھ پلانے سے اس کے دودھ کی پیداوار جاری رہے گی۔

اگر کوئی عورت اپنے کام کی جگہ پر بچے کو اپنا دودھ نہیں پلا سکتی ، تو وہ کام والے دن دو یا تین مرتبہ اپنے ہاتھ سے اپنا دودھ نکال کر فریج میں یا کمرے کے درجہ حرارت میں آٹھ گھنٹے تک کے لئے ایک صاف، ڈھکن والے برتن میں اسٹور کر لے۔ اس کے ہاتھ سے نکالا ہوا یہ دودھ ، بچے کی دیکھ بھال کرنے والا کوئی بھی فرد کسی صاف پیالی سے بچے کو فیڈ کراسکتا ہے۔

خاندان والے اور کمیونٹیاں آجروں کی حوصلہ افزائی کر سکتی ہیں کہ وہ معاوضے سمیت میٹرنٹی لیو (زچگی کی چھٹیاں)، شیرخواربچوں کے لئے اسپتال، اور ان عورتوں کے لئے وقت اور مناسب جگہ فراہم کریں جو اپنے بچوں کو اپنا دودھ یا ہاتھ سے نکال کر اسٹور کیا گیا دودھ پلانا چاہتی ہیں ۔ فراہم کردہ جگہ صاف ستھری، محفوظ اور الگ تھلک (پرائیویٹ) ہونی چاہیئے۔ ایسی جگہ پر ہاتھ اور برتن دھونے کے لئے صاف پانی کا انتظام ہونا چاہیئے۔

The Internet of Good Things