زبان: اردو
UNI187219.jpg

بچے کو ماں کا دودھ پلانے کے بارے میں یہ معلومات کیوں اہم ہے

وہ بچے جنہیں ماں کا دودھ پلایا جاتا ہے وہ عموماً زیادہ صحت مند ہوتے ہیں اور بازاری فارمولہ دودھ پر پلنے والے بچوں کی نسبت وہ زیادہ سے زیادہ سے ذہنی و جسمانی نشوونماء حاصل کر تے ہیں۔

اگر بچوں کی ایک بڑی تعداد کو زندگی کے پہلے چھ ماہ صرف ماں کا دودھ پلایا جائے، یعنی صرف ماں کا دودھ اور کوئی مشروب یا ٹھوس چیز نہیں، بلکہ پانی بھی نہیں، تو ایک اندازے کے مطابق ہر سال کم از کم 12 لاکھ بچوں کی زندگی بچائی جا سکتی ہے۔ اگر بچوں کو 2 سال یا اس سے زیادہ عمر تک ماں کا دودھ پلایا جائے تو لاکھوں بچوں کی صحت اور ذہنی و جسمانی نشوونماء میں بڑی حد تک بہتری لائی جا سکتی ہے۔

وہ بچے جنہیں ماں کا دودھ نہیں پلایا جاتا انہیں ایسے امراض لاحق ہونے کا زیادہ خطرہ ہوتا ہے جو ان کی افزائش کو متاثر کر سکتے ہیں اور ان کی موت یا معذوری کے خطرات میں اضافہ کر سکتے ہیں۔

بچے کو ماں کا دودھ پلانا ایک قدرتی عمل ہے اوریہاں تک کہ اگر فیڈنگ کے مصنوعی طریقے قابل برداشت ہوں ، پینے کا صاف پانی دستیاب ہو، اور شیر خوار بچے کے لئے بازاری فارمولہ فیڈ تیار کرنے کے لئے صاف ستھری صورت حال میسر ہو، تب بھی تمام شیر خوار بچوں کو ماں کا دودھ پلانے کی سفارش کی جاتی ہے ۔

اگر ماں ایچ آئی وی مثبت ہو، تو اس بات کا اندیشہ ہوتا ہے کہ وہ اپنا دودھ پلانے کے دوران بچے کو ایچ آئی وی منتقل کر سکتی ہے۔ مشاورت ایسے خطرات کا احتیاط سے اندازہ لگانے اور دستیاب ترجیحات میں سے کسی ایک ایسی ترجیح کو اپنانے کا موقع فراہم کرتی ہے جو اس کے بچے کے لئے بہترین ہو اور جس کاوہ زیادہ اچھے طریقے سے انتظام کر سکتی ہو۔

تقریباً ہر ماں بچے کو اپنا دودھ کامیابی سے پلا سکتی ہے۔ تمام مائیں ، خصوصاً وہ جو بچوں کواپنا دودھ پلانے میں اعتماد کی کمی کا شکارہیں ، انہیں بچے کے باپ اور اس کے خاندان کے ارکان، دوستوں اور رشتہ داروں کی جانب سے حوصلہ افزائی اور عملی مدد کی ضرورت ہے۔ کارکنان صحت، کمیونٹی کارکنان، عورتوں کی تنظیمیں اور آجران بھی انہیں مدد فراہم کر سکتے ہیں ۔

ہر کسی کو بچے کو ماں کا دودھ پلانے کے فوائد اور مصنوعی فیڈنگ کے نقصانات کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کا حق حاصل ہے۔ حکومت کی یہ ذمہ داری ہے کہ انہیں یہ معلومات فراہم کرے۔ کمیونٹیاں اور ان کے ساتھ ساتھ میڈیا اوررابطے کے دیگر ذرائع بچے کوماں کا دودھ پلانے کے عمل کو فروغ دینے میں ایک اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔

The Internet of Good Things