زبان: اردو

پیدائش کے فوری بعد نوزائیدہ بچے کو ماں کے ساتھ جلد سے جلد رابطے میں رکھنا۔

پیدائش کے فوری بعد نو زائیدہ بچے کو ماں کے حوالے کردینا چاہیے تاکہ وہ کچھ دیر اس کے پاس رہے۔ بچے کو ماں کے ساتھ جلد سے جلد کے رابطے میں رکھنا اور پیدائش کے بعد ایک گھنٹے کے اندر اندر ماں کا دودھ پلانے کا آغاز کرنا چاہیے۔

پیدائش کے فوری بعد ماں اور بچے کا جِلد سے جِلد کا رابطہ قائم کرنے اور بچے کو ماں کا دودھ پلانے سے ماں کے دودھ کی پیداوار متحرک ہوتی ہے۔

گاڑھا پیلی سی رنگت والا ماں کا پہلا دودھ پیدائش کے پہلے چند روز تک پیدا ہوتا ہے، جو نوزائیدہ بچوں کے لئے بہترین غذا ہے۔ یہ غذائیت اور جسم مخالف جراثیم (اینٹی باڈیز) سے بھرپور ہوتا ہے اور بچے کو انفیکشنز سے تحفظ فراہم کرتا ہے۔ ماں کا پیدا کردہ دودھ غذائیت سے بھرپور ہوتا ہے اور اس میں تمام غذائی اجزاء کی ضروری مقدار شامل ہوتی ہے۔ بچہ یا بچی جتنی مرتبہ بھی خواہش کرے اسے ماں کا دودھ پلانا چاہیئے۔

وہ بچہ جسے ابتدائی چند روز میں دودھ چوسنے میں مشکل ہورہی ہوماں کو اپنے ساتھ چمٹاکر رکھنا ،باربار چھاتی پیش کرنا، چھاتی کو منہ میں لینے میں مددکرنی چاہیئے یا اپنے ہاتھ سے اپنادودھ نکال کر براہ راست بچے کے منہ میں یاکسی صاف پیالی (بوتل نہیں ) سے بچے کوپلانا چاہیئے۔

ماں اور اس کے بچے کو پیدائش کے فوری بعد ایک ہی کمرے میں اکٹھا رکھنا بہترین ہے۔ اگر ماں، بچے کو کسی اسپتال یا کلینک میں جنم دیتی ہے تو وہ اپنے بچے کو 24 گھنٹے اپنے قریب رکھنے کی مجاز ہے۔ اگر وہ بچے کواپنا دودھ پلا رہی ہے تو اسے اس بات پر اصرار کرنا چاہیے کہ اس کے بچے کو بازاری فارمولہ دودھ یا پانی نہ دیا جائے۔

The Internet of Good Things