زبان: اردو

چھوٹے بچے کی افزائش اور وزن میں تیزی سے اضافہ ہوتا ہے۔ اس لیے بچے کا باقائدہ وزن کا معائنہ کروائیں۔

چھوٹے بچے کی افزائش اور وزن میں تیزی سے اضافہ ہوتا ہے۔ اس لیے بچے کا باقائدہ وزن کا معائنہ کروائیں۔

وزن میں اضافہ اس بات کی بہت اہم علامت ہے کہ بچہ صحت مند ہے۔ پیدائش سے لے کر ایک سال کی عمر تک شیر خوار بچوں کا ہر ماہ کم از کم ایک بار ضرور وزن کرنا چاہیے۔ 2-1سال کی عمر میں ان کا ہر تین ماہ بعد کم از کم ایک مرتبہ وزن کرنا چاہیے۔

اگر بچے کا وزن کم یا زیادہ ہے، تویہ بات اہم ہو گی کہ بچے کی غذا کا معائنہ کیا جائے اور والدین یا دیکھ بھال کرنے والوں کو اچھی غذائیت کے بارے میں مشورہ دیا جائے۔

وہ بچہ جسے پہلے چھ ماہ کے دوران صرف ماں کا دودھ دیا گیا ہے ، اس کی اس عرصے میں عموماً اچھی افزائش ہوتی ہے۔

چھ ماہ کی عمر کے بچے کی صحت مند افزائش اور ذہنی و جسمانی نشوونماء کو یقینی بنانے کے لئے، ماں کے دودھ کے علاوہ بچے کو غذائیت سے بھرپور مختلف کھانے کھلانے کا آغاز کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

بچوں کو نہ صرف موزوں وزن بلکہ موزوں قد حاصل کرنے کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔ بچے کے قد کا بھی چارٹ پر ریکارڈ رکھا جا سکتا ہے۔ خصوصاً زندگی کے پہلے دو برسوں کے دوران اچھی غذائیت، دیکھ بھال، صفائی ستھرائی، بچوں کو اپنی عمر کے لحاظ سے قد میں چھوٹا رہ جانے سے روک سکتی ہے۔ اگر ماں غذائیت کی کمی کا شکار ہے یا دوران حمل وہ موزوں غذائیت حاصل نہیں کر سکی، تو ممکن ہے اس کا بچہ بہت زیادہ چھوٹے قد(کم سائز) کا پیدا ہو۔ ایسی صورت حال میں بعد ازاںبچے کا قد چھوٹا (کم سائز) رہ جانے کا خطرہ لاحق ہو گا۔

ایک ایسے بچے کو زیادہ مرتبہ کھانا دینے، غذائیت سے زیادہ بھرپور خوراک دینے یا بار بار کھانا کھلانے کی ضرورت ہو سکتی ہے جس کے وزن میں ایک یا دو ماہ سے مناسب اضافہ نہیں ہو رہا۔ ممکن ہے بچہ بیمار ہو یا اسے کھانے کے معاملے میں زیادہ توجہ اور دیکھ بھال یا مدد کی ضرورت ہو۔ والدین اور تربیت یافتہ کارکنان صحت کو اس مسئلے کی وجہ جاننے اور درست اقدام کرنے کے لئے فوری عملی اقدام اٹھانے کی ضرورت ہے۔

یہاں افزائش کے مسائل کی نشان دہی میں مدد دینے کے لئے پوچھے جانے والے کچھ سوالات درج ہیں:

The Internet of Good Things