زبان: اردو

وہ لڑکیاں جو تعلیم یافتہ اور صحت مند ہیں اور جنہیں بچپن اور 12 سے 18 سال (teenage) کی عمر میں ہمیشہ غذائیت سے بھرپور غذا میسر رہی ہے، اگر وہ 18 سال کی عمر کے بعد بچے جننا شروع کرتی ہیں تو ان کے ہاں بچ

وہ لڑکیاں جو تعلیم یافتہ اور صحت مند ہیں اور جنہیں بچپن اور 12 سے 18 سال (teenage) کی عمر میں ہمیشہ غذائیت سے بھرپور غذا میسر رہی ہے، اگر وہ 18 سال کی عمر کے بعد بچے جننا شروع کرتی ہیں تو ان کے ہاں بچے زیادہ صحت مند پیدا ہونے اور حمل اور بچے کی پیدائش کا مرحلہ محفوظ رہنے کا امکان ہے۔

زیادہ رسمی تعلیم حاصل کرنے والی لڑکیاں زندگی میں اپنی صلاحیتوں کو استعمال کرنے کے لئے بہتر طور پر تیار ہوتی ہیں۔ وہ حفظان صحت کی عادات کے بارے میں جاننا چاہتی ہیں اور بہت کم عمری میں حاملہ ہونا پسند نہیں کریں گی۔ وہ ذرا بڑی عمر میں شادی کرنا، اورچند بارمگر مناسب وقفوں کے ساتھ حاملہ ہونازیادہ پسند کریں گی۔ ایک اندازے کے مطابق، اسکول میں ہر اضافی سال گزارنے والی ہر 1,000 عورتوں میں سے دو ماؤں کو موت کے منہ میں جانے سے بچایا جا سکتاہے۔

ایک بچی کو نوجوانی تک صحت مند ذہنی وجسمانی نشوونماء، اس کے بچے پیدا کرنے کے سالوں میں صحت مندحمل کے لئے تیار رہنے میں مدد دیتی ہے۔

تعلیم اورحفظان صحت کے علاوہ، لڑکیوں کو بعد ازاں حمل اور بچے کی پیدائش میں مسائل کو کم رکھنے کے لئے بچپن اور نوجوانی میں غذائیت سے بھرپور غذا کی ضرورت ہوتی ہے۔ غذائیت سے بھرپور غذا میں آیوڈین ملا نمک، اور ضروری منرلز اور وٹامنز جیسا کہ لوبیا، دالیں، غلہ، سبز پتوں والی سبزیاں، سرخ، پیلی اور نارنگی رنگ کی سبزیاں اور پھل، سے بھرپور خوراک شامل ہیں۔ جب کبھی ممکن ہو، دودھ یا ڈیری کی دیگر مصنوعات، انڈے، مچھلی، مرغی، اور گوشت کو بھی خوراک میں شامل کرنا چاہئیے۔

اسکول جانے والی لڑکیوں کے شادی اور بچے کی پیدائش میں تاخیر کرنے کے زیادہ امکانات ہوتے ہیں۔ جلدی حاملہ ہونے کی وجہ سے 18 سال سے کم عمر کی نوجوان بالغ لڑکیوں، خصوصاً ان لڑکیاں کو جن کی عمر 15 سال سے کم ہے، سنگین نتائج کا سامنا ہو سکتا ہے۔ نوجوان بالغ لڑکیوں اور ان کے بچوں کو پیچیدگیوں اور موت کے زیادہ خطرات کا سامنا ہوتا ہے۔

لڑکیوں کو بااخیتار بنانا تاکہ وہ جلد حاملہ ہونے سے پرہیز کر سکیں اور لڑکیوں اور لڑکوں دونوں کو جلد حاملہ ہونے اور ایچ آئی وی سمیت جنسی بیماریوں کے خطرات کے بارے میں معلومات فراہم کی جانی چاہئیں۔ ان دونوں کو اپنی زندگی کی ترجیحات کو صحت مند بنانے کے لئے ایسی مہارتیں پیدا کرنے کی ضرورت ہے جو مساوات اور ایک دوسرے کے لئے احترام کے رشتوں کی حمایت کرتی ہوں۔ لڑکیوں اور عورتوں کے ختنے اندام نہانی اور پیشاب کی نالی میں شدید انفیکشز پیدا کر سکتے ہیں جن کی وجہ سے وہ عورت یا لڑکی بانجھ ہو سکتی ہے یا مر سکتی ہے۔ یہ عمل بچے کی پیدائش کے دوران خطرناک پیچیدگیاں بھی پیدا کر سکتا ہے۔

کارکنان صحت اور کمیونٹی گھر گھر خدمات فراہم کرنے کے پروگرام خطرناک رسم و رواج کے بارے میں آگہی پیدا کرنے اور نوجوان بالغ لڑکیوں میں ان کی صحت اور بہبود کے لئے شادی اور حمل میں تاخیر کرنے کی اہمیت اجاگر کرنے میں مدد دیتے ہیں۔

خاندان کے لوگوں کو جلد حمل کی وجہ سے شدید خطرات کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔ اگر کوئی نوجوان بالغ لڑکی جلد شادی کر لیتی ہے اور / یا حاملہ ہو جاتی ہے، تو اس کے خاندان کے لوگوں کو چاہئیے کہ وہ اس کی مدد کریں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ اسے صحت کی وہ تمام سہولتیں حاصل ہو رہی ہیں جن کی اسے ضرورت ہے۔

The Internet of Good Things