زبان: اردو

خاندانی منصوبہ بندی کی خدمات مردوں اورایسی عورتوں کو جو بچوں کو جنم دینے کے قابل ہیں، آگہی اور ذرائع فراہم کرتی ہیں کہ وہ یہ منصوبہ بناسکیں کہ کب بچے پیدا کرنے کا آغاز کرنا چاہیئے، کتنے بچے ہونے چاہ

خاندانی منصوبہ بندی کی خدمات مردوں اورایسی عورتوں کو جو بچوں کو جنم دینے کے قابل ہیں، آگہی اور ذرائع فراہم کرتی ہیں کہ وہ یہ منصوبہ بناسکیں کہ کب بچے پیدا کرنے کا آغاز کرنا چاہیئے، کتنے بچے ہونے چاہیئں، ان کی پیدائش میں کتناوقفہ ہونا چاہیئے اور کب بچوں کی پیدائش روک دینی چاہیئے۔ حمل کی منصوبہ بندی کرنے اور اس سے بچنے کے بہت سے محفوظ، موثر، اور قابل قبول طریقے موجود ہیں ۔

تربیت یافتہ کارکنان صحت اور کلینکس کو چاہیے کہ عورتوں کو خاندانی منصوبہ بندی کے بارے میں فیصلے کرنے میں بااختیار بنانے اور مردوں اور عورتوں کو خاندانی منصوبہ بندی کے قابل قبول، محفوظ، آسان، موثر اور قابل برداشت طریقے منتخب کرنے میں مدد کرنے کے لئے معلومات اور مشورہ فراہم کریں۔

تربیت یافتہ کارکنان صحت اور کلینکس کو چاہیے کہ نوجوان بالغ لڑکیوں اور لڑکوں کو تولیدی صحت کے بارے میں معلومات اور خاندانی منصوبہ بندی کی وہ خدمات فراہم کریں جو: (1) نوجوان بالغوں کی سمجھ میں آ سکیں؛ اور (2) ان کے اندرصحت مند اور ذمہ دارانہ زندگی گزارنے کے فیصلے کرنے کے لئے ضروری مہارتیں پیدا کرنے کی صلاحیت حاصل کرنے کا رحجان پیدا کریں۔

نوجوان بالغ لڑکیوں اور نوجوان بالغ حاملہ لڑکیوں تک رسائی کے لئے خصوصی ذرائع تشکیل دینے کی ضرورت ہے جو انہیں مشاورت، مانع حمل گولیوں کے استعمال، اور قبل از پیدائش اور بعد از پیدائش خدمات پر مشتمل مدد فراہم کر سکیں۔ نوجوان بالغ حاملہ لڑکیوں کو قبل از پیدائش اور بعد از پیدائش دیکھ بھال کے لئے خصوصی توجہ اور بار بار مراکز صحت لے جانے کی ضرورت ہوتی ہے۔

نوجوان بالغ لڑکے اور مرد غیر منصوبہ بند (بغیر خواہش کے) حمل کی روک تھام کے لئے ایک اہم کردار ادا کر سکتے ہیں ۔ ان کی رسائی قربت کے تعلقات اورتولیدی صحت سے متعلق معلومات اور خدمات تک ہونا بہت اہمیت کا حامل ہے۔

کسی نوجوان بالغ لڑکی یا عورت کے پاس جتنی رسمی معلومات ہوں گی، اتنا ہی زیادہ وہ خاندانی منصوبہ بندی کے قابل بھروسہ طریقوں کا استعمال کرے گی، شادی اور بچوں کی پیدائش میں تاخیر کی کوشش کر ے گی، معاشی طور پر بہتر ہو گی اور اس کے ہاں صرف چند اور صحت مندبچے پیدا ہوں گے۔ چنانچہ تعلیم کے دیگر تمام فوائد کے علاوہ ،ماں اور بچے کی صحت کے لئے اسکول میں لڑکیوں کو داخل کروانا بہت اہم ہے۔

بہت سے مانع حمل طریقوں میں، صرف کنڈومزہی ایچ آئی وی سمیت حمل اور قربت کے تعلقات سے منتقل ہونے والے انفیکشز سے تحفظ فراہم کرتے ہیں ۔

کنڈوم کے استعمال سلسلے میں نوجوان بالغ لڑکوں، نوجوان لوگوں اور مردوں کو ان کی ذمہ داری سے آگاہ کرنا انتہائی اہم ہے۔ شادی شدہ یا غیر شادی شدہ نوجوان بالغ لڑکیوں اور لڑکوں کو کنڈوم اور کسی اور قسم کے مانع حمل (ایک وقت میں مانع حمل کے دو طریقے استعمال کرتے ہوئے) دوہرے تحفظ کے بارے میں آگہیکی ضرورت ہے تاکہ انہیں حمل سے محفوظ رہنے اور ایچ ّآئی وی سمیت جنسی بیماریوںسے محفوظ رہنے میں مددمل سکے۔

کچھ ممالک میں، نوجوان بالغ لڑکیوں میں اسقاط حمل (abortion) کی وجہ سے ہونے والی اموات کی شرح بہت زیادہ ہے۔ نوجوان بالغ لڑکیوں، نوجوان عورتوں اور ان کے ساتھیوں کو حمل سے محفوظ رہنے اور اسقاط حمل سے منسلک خطرات سے بچنے کے لئے معلومات فراہم کی جانی چاہیئں۔

اپنے بچے کو پہلے 6 ماہ تک بچے کے خواہش کے مطابق دن اور رات کے دوران صرف اپنا دودھ پلانے والی ماں اپنی ماہواری کے ایام میں تاخیر پیدا کر سکتی ہے اور حمل کو روکنے میں مدد کر سکتی ہے۔ اس بات کا بہت کم احتمال ہوتا ہے کہ وہ اپنی ماہواری کے ایام کی واپسی سے قبل حاملہ ہو سکے۔ یہ خطرہ 2 فی صد سے بھی کم ہے جو خاندانی منصوبہ بندی کے دیگر طریقوں سے ملتا جلتا ہے۔ تاہم، 6 ماہ کے بعد یہ خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

The Internet of Good Things